Saturday, December 10, 2022
Saturday, December 10, 2022

HomeNewsکیا کشیر سکولس منز چھا ہندِ نظم پرنہ آمژ؟ زانیو اتھ بارس...

کیا کشیر سکولس منز چھا ہندِ نظم پرنہ آمژ؟ زانیو اتھ بارس منز پوز

کشیر ہِندیو سیاست دانو چُھ مرکزی حکومتس پیٹھ کشیر منز ‘ہندتوا ایجنڈا’ پھلاونکُ الزام عآئد کورمتُ۔ سیاست دانن ہندِ طرفہ آو تمہِ سات یہ بیان، یلہ سوشل میڈیاہس پیٹھ مبینہ ‘سکولس منز ہندِ نظم’ پران بچن ہُند اکھ ویڈیو منظر عامس پیٹھ آو۔

سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی چُھ سکولس منز ہندِ نظم پران یہ ویڈیو شیئر کرتھِ اکھ ٹویٹ کورمتُ۔ یتھ منز تِمو ون زہِ “سانِ مذہبی رہنما، جیلن منز تھاوتھِ، جامع مسجد بند کرتھِ تہ مسلمان بچن سکولن منز ‘ہِند نظم’ پرناونہ ساتِ چُھ ہندوستان بے نقاب کژھان زہِ ہندوستان چُھ کشیر منز ‘ہندوتوا’ ایجنڈا پہلاوان۔ یسُ نہ یمن پیھ عمل کرِ تمن چُھ یوان پی ایس اے تہ یو اے پی اے لاگنہ۔ یہ چُھ ‘جموں و کشمیرس منز بدلاو’ کسِ ناوس پیٹھ اسہِ امیوک قآمت چکاوان”۔

نیشنل کانفرنس سینئر لیڈر تہ ریاستی ترجمان عمران نبی ڈار چُھ ‘سکولس منز ہندِ نظم’ ویڈیو شیئر کرتھِ حکومتس پیٹھ سوال کران زہِ آیا کشیر ہَندِ سکول چھا سیاسی ٹول بناونہ آمتِ؟۔

سکولس منز ہندِ نظم
Screenshot from twitter handle of @ImranNDar

امہ علاو چھِ ‘سکولس منز ہندِ نظم’ پران یہ ویڈٰیو صارفو دسِ سوشل میڈیاہس پیٹھ امتُ شیئر کرنہ، یمن منز وننہ چُھ آمتُ زہِ مودی حکومت چھِ مسلمان بچن ہِند عقیدت نظم پرناونس پیٹھ مجبور کران۔ لنک یکیو توہیِ یتیتھ، یتیتھ تہ یتیتھ وچتھ۔

فیس بُکس پیٹھ تہ چُھ آمتُ ‘سکولس منز ہندِ نظم’ ویڈیو سیٹھا صارفو دسِ شیئر کرنہ۔ یمن منز وننہ چُھ آمتُ زہِ یہ چھ کشیر خاطرء لمحہ فکریہ۔

اکِ صارف سید ثنا چھ ‘سکولس منز ہندِ نظم’ ویڈیو شیئر کورمتُ، یُس 90 ساس کھوتہ زیادہ لکو چُھ وچھمتُ۔

اتھ متعلق مزید سوشل میڈیا پوسٹ ہیکیو توہیِ یتیتھ تہ یتیتھ وچتھ۔

Fact Check/Verification 

اسہ نیو امہِ وائرل ‘سکولس منز ہندِ نظم’ ویڈیوکُ باریکی سان جائزہ تہ اسہِ لوبہ زہِ یہ چُھ کشیر ہندسِ ضلع کولگام کس ناگم علاقہ منز سکولکُ ویڈیو۔ یتھ منز بچہ چھِ اکھ نظم پران۔

اتھ بارس منز سچائی زاننہ خاطرء کور اسہِ امہ سکول کسِ نائب ہیڈماسٹر گلزار احمد بیگ صابس سآتِ رابطہ۔ تمو کور تصدیق زہِ یہ چھُ سانِ سکولکُ ویڈیو تہ حکومت طرفہ دینہ آمتسِ ہدایت تہ 2 ستمبر یعنی گاندھی جی نسِ دوہس خاطرء تیاری ہندسِ پسِ منظرس منز چُھ یہ ویڈیو آمتُ بناونہ۔

اسہِ کور امہ علاؤ رابطہ ضلع کسِ چیف ایجوکیشن افسر محمد اشرف راتھر صابس ساتِ تمو ون زہِ سرکاری فرمان مطابق چھ گاندھی جی نسِ زایہ دوہ (گاندھی جیانتی) کسِ سلسلس منز تیاری خاطرء سکولن منزیمہ سرگرمی یوان کرنہ۔

Activity schedule as per government order for the preparation of Gandhi Jayanti
Government Order

کیا رگھو پتی راون راجا رام چھا ہِند نظم؟

اتھ نظمِ چُھ اصل ناو رمدھون۔ یہ چھ عقیدت نظم تہ لکشمن آچاریہ ہن چھِ یہ اصلی لیچھِ مژ تہ تمہ پتھ چھِ اتھ نظمِ گاندھی جی ین ترمیم کرمژ تہ گاندھی جی نس مشہور ڈانڈی مارچس دوران چھِ آس مژ یہ نظم یوان اکثر پرنہ۔ یہ فلُ نظم ہکیو توہیِ گاندھی جی سنزِ آشرم چھِ وئب سائٹِ پیٹھ وچتھ۔

امہ نظمِ ہندسِ ترئیِ مسِ بندس منز چُھ لیکتھِ ایشور اللہ تیرا نام (یعنی ایشور اللہ چُھویِ ژیی ناؤ، ژیی کرکھ سارنی پیٹھ رحم) امہِ سآتِ چُھ آو سمجھ زہِ یہ چھِنہ مذہبی عقیدت نظؐ کینہ۔

گاندھی جی سنز کتاب (مائی ایکسپریمنٹ ودِھ  ٹروتھ) ‘گاندھی امیج اینڈ نان وائلنس’مورخ تہ مصنف’ ونے لالن چُھ لیوکھ مُت “گاندھی جی سندِ سیکرٹری مہادیون دیسائی سندِ اولاد نارائن دیسائی یمہ بچپن کینہ گزور گاندھی جی یس نزدیک، تمہ سندُ ونن چُھ زہِ یہ نظم گئی سیٹھا مشہور ڈانڈی مارچ تہ تمہ پت سول نافرمانی دوران۔ امہ پت آس یہ نظم نہ صرف ہند مذہب بلکہ ہندستانس منز مشہور۔

ونے لال چھِ لیکھان زہِ مسلمان، ہند عیسائی تہ باقی مذہب آسِ خدایس مختلف ناو ساتِ یاد کران، مگر گاندھی جی ینُ یقین اوس زہِ یہ نظم چھِ صرف تمام مزہب کین لکن پانوآن رلاوان۔

فرسٹ پوسٹ چُھ اتھ نظمِ متعلق اکھ آرٹیکل لیکھان، توہیِ  ہیکیو یتیتھ وچتھ۔

Conclusion

لہذا ‘سکولس منز ہندِ نظم’ ویڈٰیو یتھ منز بچہ نظم چھ پران اتھ متعلق دعویٰ زہِ حکومت چھِ امہِ نظمِ دسِ کشیر منز ہندوتوا ایجنڈا پہلاون چُھ غلط۔ سانِ تحقیقات سآتِ لوگ پتہ زہِ یہ چھ گاندھی جیانتی خاطرء تیاری کرنہ کسِ سلسلس منز حکومتکُ فرمان۔ تہ یہ نظم چھنہ ہندو نظم۔ بلکہ چھِ یہ گاندھی جی ین تمام مذہبن درمیان مساوات خاطرء اتھ منز ترمیم کرمژ۔

Result: Missing Context

Our Sources

1. Gandhi Sevagram Ashram website accessed on 20th September 2022

2. Firstpost report dated 2nd October 2019. Archived Link here.

3. Statement of Chief Education Officer, Kulgam as stated in a phone conversation with Newschecker.

4. Statement of Deputy Headmaster of the school, as stated in a phone conversation with Newschecker.


If you would like us to fact-check a claim, give feedback, or lodge a complaint, WhatsApp us at 9999499044 or email us at [email protected]. You can also visit the Contact Us page and fill out the form.

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular