Saturday, November 26, 2022
Saturday, November 26, 2022

HomeViralکیا مسلمان سکالرو چھا حلال کھین چینس منز تھوک تراونس اقرار کورمتُ؟...

کیا مسلمان سکالرو چھا حلال کھین چینس منز تھوک تراونس اقرار کورمتُ؟  

سوشل میڈیا پلیٹ فارم تہ واٹس ائپس پیٹھ چھِ اکھ مسیج وائرل گژھان۔ یتھ منز دعویٰ چُھ یوان کرنہ زہِ تامل ناڈو عدالتس منز کور مسلمان طبقن اقرار زہِ حلال کرنہ خاطرء چھِ پیوان چیزن تھوک تراونِ۔

اتھ مسیج سآتِ چُھ اکھ تامل ناڈو وچِ اِندو مکال کٹچی سُند 2021 ہس منز کرنہ آمتُ اکھ ٹویٹ تہِ یتھ منز حلال ہوٹلن منز کھین چین کرنس آمتُ چُھ منہ کرنہ۔ نیوز چیکر تحقیقاتس منز آو یہ دعویٰ غلط لبنہ۔

یہ مسیج چھِ آمژ دلیپ راول سندِ طرفہ فیس بُکس پیٹھ شیئر کرنہ، یتھ 146 لائک تہ 95 لٹہِ آمتُ چُھ سیئر کرنہ۔

اسہِ آو لبنہ زہِ امہِ علاوہ چھِ یہ مسیج باقی صآرِفو طرفہ تہ شیئر آمژ کرنہ۔

Fact Check /Verification

تحقیقات شروع کرنہ خاطرء کور اسہِ انگریزی یس منز ‘حلال’، ‘تامل ناڈو علاتس منز مقدمہ’ وغیرہ الفاظ گوگل سرچ، الفاظ گوگل سرچ۔ اسہ ِآو نہ اتھ متعلق کانہہ تہِ رپورٹ لبنہ کینہ۔

مزید سرچ کرنہ پتہ آو اسہِ رپورٹ لبنہ یتھ منز مدعی ین لیوکھ متُ چُھ زہِ حلال چھنہ تِیُوت کال مکمل یوُت کال نہ اتھ منز تھوک آسہِ۔ تہ اتھ سلسلس منز سبری مالا ایکشن کمیٹی ہندِ جنرل کنوینر ایس جے آر کمارن کیرالہ ہائی کورٹس منز مقدم دائر کورمتُ۔ امہِ چھِ ٹراونکور دیوسوم بورڈس مخالفت کرمژ، یُس سبری مالا معاملات وچھان چھِ تہ حلال گوڈ نیویدیام تہ پرسادم بناونہ خاطرء استعمال کران۔

مدعی سندِ طرفہ شکایتِ منز چُھ لیکھنہ آمتُ زہِ ‘مسلمانن ہندِ مذہبی سکالرو چُھ ونمتُ زہِ تھوک چھِ ایشیاء خوردنی حلال کرنہ خاطرء اہم جزُ، تہ یمو سکالرو چُھ مختلف کتاب پرنہ پت یہ رائے ونِمژ، تاہم چھِ کینہ مذہبی رہنما اتھ متعلق مختلف رائے ونان’۔

حلال
Courtesy: Verdictum

نیوز چیکر کسِ تحیقیاتس دوران آو لبنہ زہِ عدالتس منز مقدم دائر کرن والِ چھِ مقدمس منز یہ رائے پانئے ونمژ، یہ رائے چھنہ کانسئِ سکالر سندِ طرفہ آمژ وننہ کینہ۔

کیرالہ عدالتن چُھ مدعی یس سوال کورمتُ زہِ حلال کیا گو۔

قانونی خبرن پیٹھ مشتمل ایک ویب سائٹ لیولا اکسِ رپورٹس منز چُھ وننہ آمتُ زہِ “حلال مطلب چُھ کینہ چیز چھِ منع تہ باقی تمام چیزن چُھ اجازت۔ مطلب یہ کہِ اتھ چیزس منز چھنہ کانہہ تہِ سئُ چیز یتھ منع چُھ آمتُ کرنہ”۔

تحقیقاتس منز آو اسہ لبنہ نیوز منٹ ویب سائٹِ پیٹھ اکھ رپورٹ لبنہ زہِ کیا توہیِ چھا پتہ کہِ حلال کیا گو؟

رپورٹس منز چُھ وننہ آمتُ زہِ کیرالہ ہائی کورٹن چُھ سبری مالاہس منز گوڈ استعمال کرنہ کسِ مقدم معاملس منز چھِ مدعیی یس نصیحت کرمژ زہِ حلال الفاظ مطلب گژھِ سمجنُ۔

“رپورٹس منز چُھ وننہ آمتُ زہِ نومبر 18 ون ٹراونکور دیواسوم بورڈن، یُس لارڈ ایاپا مندرچ تہِ دیکھبال کران چھِ ؤن عدالتس زہِ یمہ کپپنی ہند گؤڈ یمہ استعمال کران چھِ، سُہ کمپنی چھِ عرب ملکن تہِ سپلائی کران، تہ گؤد کسِ پیکس پیٹھ چُھ لیکتھ زہِ یہ چُھ حلال، یتھ جوابس منز عدالتن وؤن زہِ اتھ سلسلس منز یِیہِ تفصیلی سنوائی پتھ فآصلہ دینہ”۔  

تحقیقاتس دوران آئی نہ نیوز چیکرس اتھ سلسلس منز کانہہ تہِ تازء رپورٹ لبنہ۔

Conclusion

لہذا یُس زن واٹس ایپس پیٹھ مسیج کردش کران چھِ زہِ مسلمان سکالرو چُھ تامل ناڈو عدالتس منز تسلیم کورمتُ زہِ حلال کرنہ خاطرء چھِ چیزن منز یوان تھوک تراونہ یہ دعویٰ چُھ غلط۔ نیوز چیگر تحقیقات مطابق چُھ یہ دعویٰ ایس جے آر سندِ طرفہ کیرالہ عدالتس منز شکایتِ منز آمتُ لیکھنہ۔

Result: False

Our Sources

Petition filed by SJR Kumar in Kerala on  Verdictum on 17th November, 2021

Report by Live Law on 24th November, 2021

Report by News Minute on 25th November, 2021


If you would like us to fact-check a claim, give feedback, or lodge a complaint, WhatsApp us at 9999499044 or email us at [email protected]. You can also visit the Contact Us page and fill out the form.

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular