جمعرات, دسمبر 8, 2022
جمعرات, دسمبر 8, 2022

HomeFact Checkکیا یہ باجماعت نماز قطر میں فیفا ورلڈکپ 2022 کے دوران ادا...

کیا یہ باجماعت نماز قطر میں فیفا ورلڈکپ 2022 کے دوران ادا کی گئی؟ جانیں سچ

ان دنوں قطر میں منعقد ہورہے فیفا ورلڈکپ 2022 کے سلسلے میٰں مسلمان اور اسلام سے متعلق کافی مواد وائرل ہورہا ہے۔ اسی سلسلے میں سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو شیئر کی جارہی ہے۔

دعویٰ ہے کہ اسٹیڈیم میں باجماعت ادا کی جا رہی نماز کی یہ ویڈیو قطر کی ہے۔ ویڈیو کے کیپشن میں ایک فیس بک صارف نے لکھا ہے کہ “قطر۔ فٹبال گراؤنڈ میں نماز ادائیگی کا ایک خوبصورت منظر”۔

اسٹیڈیم میں باجماعت ادا کی جا رہی نماز کی یہ ویڈیو روس کی ہے۔
Courtesy:FB/Trending Videos

اسٹیڈیم میں باجماعت ادا کی جارہی نماز کا بتاکر اس ویڈیو کو فیس بک کے علاوہ ٹویٹر اور یوٹیوب پر بھی شیئر کیا گیا ہے۔

courtesy:YouTube/ZainRajput

Fact Check/ Verification

اسٹیڈیم میں باجماعت ادا کی جارہی نماز کی ویڈیو کو ہم نے انوڈ کی مدد سے کیفریم میں تقسیم کیا اور ان میں سے ایک فریم کو گوگل ریورس امیج سرچ کیا۔ اس دوران ہمیں 4جون 2019 کو شیئر “نیپال مسلم کمنیوٹی” نامی فیس بک پیج پر وہی ویڈیو ملی۔ جسے قطرکے فٹبال اسٹیڈیم میں ادا کی گئی نماز کا بتاکر شیئر کیا جارہا ہے۔ صارف نے اس ویڈیو کو روس کے کزان اسٹیڈیم میں نماز عید کا بنتاکر شیئر کیا ہے۔

اسٹیڈیم میں باجماعت ادا کی جا رہی نماز کی اس ویڈیو سے متعلق مزید سرچ کے دوران ہمیں دی میسج آف اے جی او نامی یوٹیوب چینل پر مذکورہ ویڈیو ملی۔ جس میں دی گئی معلومات کے مطابق یہ ویڈیو روس کے کزان اسٹیڈیم کی ہے۔ اس کے علاوہ ہم نے جب گوگل کزان اسٹیڈیم نماز کیورڈ سرچ کیا تو ہمیں گیٹی امیجز کی ویب سائٹ پر بھی وائرل ویڈیو سے ملتی جلتی ویڈیو ملی۔ یہاں اس ویڈیو سے متعلق بتایا گیا ہے کہ یہ روس کے کزان اسٹیڈیم میں افطار کے بعد اداکی گئی نماز کی ویڈیو ہے۔

Courtesy:YouTube/ The message of Islam

Conclusion

اس طرح نیوز چیکر کی تحقیقات سے پتا چلا کہ اسٹیڈیم میں باجماعت ادا کی جارہی نماز کی یہ ویڈیو قطر فیفا ورلڈکپ کی نہیں، بلکہ یہ ویڈیو پُرانی ہے اور روس کے کزان اسٹیڈیم میں ادا کی گئی نماز کی ہے۔

Result: False


Our Sources

Facebook post by NEPAL Muslim Community on 04 june 2019
YouTube video uploaded by The Message of Islam on 10 Jun 2019
Video published by GettyImages on 22 Jun 2016

کسی بھی مشکوک خبر کی تحقیقات، تصحیح یا دیگر تجاویز کے لیے ہمیں واٹس ایپ کریں: 9999499044 یا ای میل: [email protected]

Mohammed Zakariya
Mohammed Zakariya
Zakariya has an experience of working for Magazines, Newspapers and News Portals. Before joining Newschecker, he was working with Network18’s Urdu channel. Zakariya completed his post-graduation in Mass Communication & Journalism from Lucknow University.
Mohammed Zakariya
Mohammed Zakariya
Zakariya has an experience of working for Magazines, Newspapers and News Portals. Before joining Newschecker, he was working with Network18’s Urdu channel. Zakariya completed his post-graduation in Mass Communication & Journalism from Lucknow University.

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular