منگل, مئی 21, 2024
منگل, مئی 21, 2024

ہومFact CheckViralFact Check: کولکاتہ میں مودی کے حامیوں کی پٹائی کی نہیں بلکہ...

Fact Check: کولکاتہ میں مودی کے حامیوں کی پٹائی کی نہیں بلکہ 2022 میں ہوگلی میں ہوئی جھڑپ کی ہے یہ ویڈیو

Authors

Zakariya has an experience of working for Magazines, Newspapers and News Portals. Before joining Newschecker, he was working with Network18’s Urdu channel. Zakariya completed his post-graduation in Mass Communication & Journalism from Lucknow University.

Claim
یہ ویڈیو بنگالی باشندوں کے ہاتھوں کولکاتہ میں مودی کے حامیوں کی پٹائی کی ہے۔
Fact
ویڈیو 2022 میں ہوگلی میں ٹی ایم سی اور بی جے پی کارکنوں کے مابین ہوئی جھڑپ کی ہے۔

سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہو رہی ہے، جس میں ایک ہجوم بی جے پی کی انتخابی گاڑی پر بیٹھے لوگوں پر حملہ کرتے ہوئے نظر آ رہا ہے۔ جس کے ساتھ صارفین کا دعویٰ ہے کہ کولکاتہ میں بنگالی باشندوں نے مودی کے حامیوں کی پٹائی کی ہے۔ صارف نے ویڈیو کے ساتھ کیپشن میں لکھا ہے کہ “کولکاتہ، بنگالی باشندوں نے مودی حکومت کو فروغ دینے والوں کی صحیح سے پٹائی لگائی”۔

یہ ویڈیو بنگالی باشندوں کے ہاتھوں کولکاتہ میں مودی کے حامیوں کی پٹائی کی ہے۔
Courtesy: X @KashmirUrdu

Fact Check/Verification

نیوز چیکر نے سب سے پہلے وائرل ویڈیو کے کیفریمز کی مدد سے ریورس امیج سرچ کیا۔ اس دوران ہمیں ٹائمز آف انڈیا کی ویب سائٹ پر 6 اگست 2022 کو شائع ہونے والی ایک ویڈیو رپورٹ موصول ہوئی۔ اس رپورٹ کے مطابق وائرل ویڈیو مغربی بنگال کے ہوگلی میں بی جے پی اور ٹی ایم سی کارکنوں کے درمیان ہوئے تصادم کی ہے۔ اس دوران ٹی ایم سی کے ایک لیڈر کو بھی بی جے پی کارکنوں پر حملہ کرتے دیکھا گیا تھا۔ ساتھ ہی بی جے پی کارکنوں نے بھی ٹی ایم سی لیڈر پر ہاتھ اٹھایا تھا۔

Courtesy: Times of India

گوگل پر متعلقہ کیورڈ تلاش کرنے پر، ہمیں ای ٹی وی بھارت کی ویب سائٹ پر 5 اگست 2022 کو شائع ہونے والی ایک رپورٹ ملی۔ جس میں ہوبہو ویڈیو موجود ہے۔

Courtesy: ETV Bharat

ای ٹی وی بھارت کی رپورٹ کے مطابق 5 اگست 2022 کو ترنمول کانگریس کے ایم ایل اے آسیت مجومدار اور ان کے حامیوں نے ہوگلی ضلع میں بی جے پی کارکنوں پر حملہ کیا تھا۔ تاہم ترنمول ایم ایل اے نے اس کی تردید کرتے ہوئے کہا تھا کہ پہلے بی جے پی کارکنوں نے ان پر حملہ کرنے کی کوشش کی تھی، جس کے بعد ترنمول کے کچھ کارکنان نے آکر ہمیں بچایا تھا۔

ایم ایل اے آسیت مجومدار کے بیان کے مطابق وہ کولکاتہ سے اسمبلی کی اسٹینڈنگ کمیٹی کی میٹنگ میں شامل ہوکر واپس شہر میں داخل ہونے لگے تو انہیں شدید ٹریفک جام نظر آیا۔ اس دوران بی جے پی کے 25-30 کارکنوں نے انہیں گھیر لیا اور ان کے اور پارٹی کے خلاف نعرے بازی کی تھی۔ بی جے پی کارکنوں نے ان پر حملہ بھی کیا، لیکن جب وہاں موجود ٹی ایم سی خاتون کمیٹی کی میٹنگ میں موجود لوگوں کو پتہ چلا تو انہوں نے آکر ٹی ایم سی ایم ایل اے کو بچایا تھا۔

تاہم، بی جے پی کارکنوں نے ایم ایل اے کے دعوے کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ ایم ایل اے اور ان کے حامیوں نے بغیر کسی اشتعال کے ان پر حملہ کیا ہے۔

Conclusion

ہماری تحقیقات میں ملے شواہد سے یہ واضح ہے کہ وائرل ویڈیو کولکاتہ کی نہیں ہے بلکہ 2022 میں مغربی بنگال کے ہوگلی میں ترنمول کانگریس اور بی جے پی کارکنوں کے درمیان ہوئے ایک تصادم کی ہے۔

Result: Missing Context

Sources
Reports published by Times Of India and ETV Bharat on 5,6 Aug 2022


نوٹ: کسی بھی مشتبہ خبر کی تحقیق، ترمیم یا دیگر تجاویز کے لئے ہمیں واہٹس ایپ نمبر 9999499044 پر آپ اپنی رائے ارسال کر سکتے ہیں۔ ساتھ ہی ہمارے واہٹس ایپ چینل کو بھی فالو کریں۔

Authors

Zakariya has an experience of working for Magazines, Newspapers and News Portals. Before joining Newschecker, he was working with Network18’s Urdu channel. Zakariya completed his post-graduation in Mass Communication & Journalism from Lucknow University.

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

Most Popular