پیر, جنوری 17, 2022
پیر, جنوری 17, 2022
HomeFact Checkپورے بھارت میں فی لیٹر 25 روپے پیٹرول سستا ہونے کی خبر...

پورے بھارت میں فی لیٹر 25 روپے پیٹرول سستا ہونے کی خبر گمراہ کن ہے

سوشل میڈیا پر دعویٰ کیا جا رہا ہے کہ پورے بھارت میں فی لیٹر 25 روپے پیٹرول سستا کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔ فیس بک پر صارفین نے لکھا ہے کہ”بھارت میں پیٹرول 25 روپے فی لیٹر سستا کرنے کا اعلان”۔

پورے بھارت میں فی لیٹر 25 روپے پیٹرول سستا دینے  کی خبر بے بنیاد
Courtesy:FB/ Naveed khan

سال 2021 میں بھارتی شہریوں پر پیٹرول، ڈیزل اور گھریلو گیس کی قیمت نے بڑا اثر ڈالا تھا۔ نیوز18 اردو کی ایک رپورٹ کے مطابق سال 2021 میں راجستھان اور مدھیہ پردیش کے کئی شہروں میں پیٹرول کی قیمت نے 115 روپے فی لیٹر کی سطح کو بھی پار کر لیا تھا۔ 2021 میں خام تیل نے 86 ڈالر کے قریب کا ہائی لیول درج کیا تھا۔ اسی کے پیش نظر ان دنوں ایک پوسٹ شیئر کیا جا رہا ہے، جس میں دعویٰ کیا جا رہا ہے کہ بھارت میں فی لیٹر پیٹرول کی قیمت 25 روپے سستا کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔

مذکورہ دعوے والا پوسٹ ٹویٹر پر بھی شیئر کیا گیا ہے۔ آرکائیو لنک یہاں اور یہاں دیکھیں۔

viral post
viral post

Fact Check/Verification

کیا بھارت میں فی لیٹر 25 روپے پیٹرول سستا کرنے کا اعلان کیا گیا ہے؟ اس دعوے کی سچائی جاننے کے لئے ہم نے سب سے پہلے گوگل پر اس حوالے سے کیورڈ سرچ کیا۔ جہاں ہمیں آج تک نیوز ویب سائٹ پر ایک جنوری 2022 کی ایک خبر ملی۔ جس میں دی گئی جانکاری کے مطابق نئے سال کے پہلے دن بھارتی تیل کمپنیوں نے اپنا اپڈیٹ جاری کیا تھا۔ جس میں یہ جانکاری دی گئی تھی کہ پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی ہے۔

پھر ہم نے ہندی میں “فی لیٹر 25 روپے پیٹرول ہوا سستا” کیورڈ سرچ کیا۔ اس دوران ہمیں متعد خبریں ملیں۔ جن کی ہیڈ لائنس کے مطابق جھارکھنڈ میں 26 جنوری سے پیٹرول 25 روپے فی لیٹر سستا کیا جائے گا۔

سرچ کے دوران ہمیں نیوز ایجنسی اے این آئی پر شیئر شدہ 29 دسمبر 2021 کے ٹویٹس ملے۔ جس میں دی گئی جانکاری کے مطابق جھارکھنڈ کی ہیمنت سرکار نے اعلان کیا ہے کہ 26 جنوری 2022 سے اسکول، کالج جانے والے طلباء، غریب، مزدور اور مڈل کلاس لوگوں کو فی لیٹر 25 روپے پیٹرول سستا دیا جائے گا۔ غریب، مزدور و طلباء کو راحت دینے کے لئے ہیمنت سرکار نے پیٹرول پر سبسڈی دینے کا فیصلہ لیا ہے۔

مذکورہ تحقیقات سے پتا چلا کہ جھارکھنڈ میں صرف فی لیٹر 25 روپے پیٹرول سستا کیا گیا ہے، نا کہ پورے بھارت میں۔ سرچ کے دوران ہمیں جھارکھنڈ کے وزیر اعلیٰ ہیمنت سورین کے آفیشل ٹویٹر ہینڈل پر ایک پوسٹ ملا۔ ٹویٹ میں وزیر اعلیٰ ہیمنت سورین نے جانکاری دی ہے کہ ریاستی سرکار موٹر سائیکل اور اسکوٹر میں پیٹرول بھروانے پر فی لیٹر 25 روپے راحت دے گی۔ انہوں نے آگے لکھا ہے کہ ایسے لوگ جن کے پاس موٹرسائیکل اور اسکوٹر ہے اور پھر بھی وہ پیٹرول کی بڑھتی قیمتوں کی وجہ سے اپنی فصل بیچنے بازار نہیں جا پاتے تو ایسے لوگوں کو سرکار 25 روپے فی لیٹر کی در سے ان کے بینک اکاؤنٹ میں پیسے بھیجے گی۔ یہ اسکیم 26 جنوری سے نافذ کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: کیا سرکارنے اڈانی گیس کے ہاتھو بیچ دیا انڈین آئل کارپوریشن؟

Conclusion

نیوز چیکر کی تحقیقات میں یہ ثابت ہوتا ہے کہ پورے بھارت میں فی لیٹر 25 روپے پیٹرول کے سستا ہونے کی خبر بے بنیاد ہے۔ دراصل جھارکھنڈ سرکار نے طلباء، غریب طبقہ اور وسطی درجہ کے لوگوں کے لئے پیٹرول پر سبسڈی دینے کا اعلان کیا ہے۔ جس کے تحت ہر مہینے 25 روپے فی لیٹر کی در سے 10 لیٹر تک کا پیسہ ان کے بینک اکاؤنٹ میں ٹرانسفر کیا جائے گا۔


Result: Misleading

Source

AajTak:https://www.aajtak.in/business/news/story/petrol-diesel-price-today-01-january-2022-fuel-price-stable-in-india-new-year-first-day-iocl-all-cities-petrol-diesel-rate-lbsb-1384476-2022-01-01

ANI Tweet:https://twitter.com/ANI/status/1476150549506527232

CM jharkhand Tweet:https://twitter.com/JharkhandCMO/status/1476124702196178946


نوٹ:کسی بھی مشتبہ خبرکی تحقیق،ترمیم یا دیگرتجاویز کے لئے ہمیں نیچے دئیے گئے واہٹس ایپ نمبر پر آپ اپنی رائے ارسال کر سکتےہیں۔

9999499044

Mohammed Zakariyahttps://newschecker.in/ur
Zakariya has an experience of working for Magazines, Newspapers and News Portals. Before joining Newschecker, he was working with Network18’s Urdu channel. Zakariya completed his Master in Mass communication and Journalism from Lucknow University.Lucknow
Mohammed Zakariyahttps://newschecker.in/ur
Zakariya has an experience of working for Magazines, Newspapers and News Portals. Before joining Newschecker, he was working with Network18’s Urdu channel. Zakariya completed his Master in Mass communication and Journalism from Lucknow University.Lucknow

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular