جمعہ, دسمبر 3, 2021
جمعہ, دسمبر 3, 2021
HomeFact Checkسعودی شہزادہ محمد بن سلمان اور نتن یاہو نے نہیں کی ویڈیو...

سعودی شہزادہ محمد بن سلمان اور نتن یاہو نے نہیں کی ویڈیو کال پر بات چیت۔ فرضی ویڈیو وائرل

سوشل میڈیا پر شہزادہ سلمان اور نتن یاہو کے نام سے ایک ویڈیو وائرل ہو رہا ہے۔ یوزر کا دعویٰ ہے کہ اسرائيلی وزیر اعظم بنیامین نتن ياہو اور سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان ویڈیو کال پر باتیں کر رہے ہیں۔ جس کا ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو گیا ہے۔ مزید لکھا ہے کہ مسلمان جن سے توقع رکھے ہوئے ہیں ان کا یہودیوں کے ساتھ یہ رشتہ ہے دیکھیں کیا سعودی عرب اسرائیل کے خلاف کچھ بولے گا۔۔؟؟

سعودی شہزادہ سلمان اور نتن یاہو کے حوالے سے وائرل پوسٹ کا اسکرین شارٹ
سعودی شہزادہ سلمان اور نتن یاہو کے حوالے سے وائرل پوسٹ کا اسکرین شارٹ

وائرل پوسٹ کے آرکائیو لنک یہاں، یہاں اور یہاں دیکھیں۔

اس ویڈیو کو فیس بک اور ٹویٹر پر خوب شیئر کیا جا رہا ہے۔ جسے آپ درج ذیل میں دیکھ سکتے ہیں۔ اس ویڈیو کو زیادہ تر پاکستانی یوزرس نے شیئر کیا ہے۔

سعودی شہزادہ سلمان اور نتن یاہو کے حوالے سے وائرل پوسٹ کا اسکرین شارٹ
سعودی شہزادہ سلمان اور نتن یاہو کے حوالے سے وائرل پوسٹ کا اسکرین شارٹ
سعودی شہزادہ سلمان اور نتن یاہو کے حوالے سے وائرل پوسٹ

Fact Check / Verification

وائرل ویڈیو کی سچائی جاننے کے لئے ہم نے سب سے پہلے ویڈیو کو انوڈ کی مدد سے کیفریم میں تقسیم کیا اور ان میں سے کچھ فریم کو ریورس امیج سرچ کیا۔ اس دوران ہمیں اسکرین پر کچھ بھی اطمینان بخش جواب نہیں ملا۔ لیکن ہمیں وائرل ویڈیو کے بالائی حصے میں بائیں جانب “المصدر نیوز” لکھا ہوا نظر آیا۔

المصدر نیوز لکھ کر جب ہم نے گوگل اور یوٹیوب پر سرچ کیا تو ہمیں کئی لنک فراہم ہوئے۔ لیکن جو ”لوگو” وائرل ویڈیو میں نظر آرہا ہے اس سے مختلف ”لوگو” والا ویب سائٹ ملا۔ جسے آپ درج ذیل میں دیکھ سکتے ہیں۔

پھر ہم نے ویڈیو کی باریکی سے تحقیقات شروع کی اور “سعودی شہزادہ محمد بن سلمان اور نتن یاہو کی ویڈیو کال پر بات چیت” کیورڈ سرچ کیا۔ جہاں ہمیں ولایت اردو اور مڈل ایسٹ نامی ویب سائٹ پر 27 اور 28 دسمبر 2019 کی خبریں ملیں۔ رپورٹس کے مطابق اسرائیلی وزیر اعظم نتن یاہو نے سعودی کے متنازعہ صحافی اور بلاگر محمد سعود سے ویڈیو کال پر بات چیت کی تھی۔

بتادوں کہ نتن یاہو نے سعودی بلاگر محمد سعود سے لیکوڈ پارٹی کے داخلی انتخاب کے پیش نظر ویڈیو کال پر بات چیت کی تھی۔ یہاں پتا چلا کہ یہ ویڈیو سعودی شہزادہ محمد سلمان اور نتن یاہو کی ویڈیو کال پر بات چیت کا نہیں بلکہ نتن یاہو اور سعودی بلاگر کے بیچ ہوئی بات چیت کا ہے۔ جسے ایڈٹ کر کے شیئر کیا گیا ہے۔

پھر ہم نے یوٹیوب پر وائرل ویڈیو کو سرچ کیا۔ اس دوران ہمیں 5سوم نامی یوٹیوب پر 27 دسمبر 2019 کو اپلوڈ شدہ ویڈیو ملا۔ جس میں صاف طور پر دیکھا جا سکتا ہے کہ اسرائیلی وزیراعظم محمد بن سلمان سے ویڈیو کال نہیں کر رہے ہیں، بلکہ کسی دوسرے شخص سے بات کر رہے ہیں۔ ویڈیو کے ڈسکرپشن میں دی گئی جانکاری کے مطابق نتن یاہو جن سے بات کر رہے ہیں وہ سعودی عرب کا ایک بلاگر ہے۔ جس کا نام محمد سعود ہے۔

مذکورہ تحقیقات سے واضح ہو چکا کہ وائرل ویڈیو میں جس شخص سے نتن یاہو ویڈیو کال پر بات کر رہے ہیں وہ سعودی شہزادہ محمد بن سلمان نہیں ہیں بلکہ سعودی عرب کے صحافی اور بلاگر محمد سعود ہیں۔

محمد سعود کے بارے میں کیورڈ سرچ کیا تو ہمیں الجزیرہ اور غزہ پوسٹ پر 2019 کی خبریں ملیں۔ جس کے مطابق فلسطینیوں نے سعودی عرب کے بلاگر محمد سعود کو مسجد اقصیٰ سے باہر نکال دیا تھا۔ رپورٹس میں یہ بھی واضح کیا گیا ہے کہ بلاگر محمد سعود اسرائیل اور وزیراعظم نتن یاہو کے حمایتی ہیں۔ جس کی وجہ سے فلسطینیوں نے انہیں مسجد اقصیٰ سے خارج کیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: سعودی عرب کی امیرزادی کا پاکستانی ڈرائیور سے شادی کرنے کا دعویٰ فرضی ہے

وہیں ٹویٹر ایڈوانس سرچ کیا تو ہمیں اسرائیلی وزیر اعظم نتن یاہو کا ایک ٹویٹ ملا۔ جسے انہوں نے محمد سعود اور ان کے والد کےکرونا وائرس سے متاثر ہونے کے بعد کیا تھا۔

Conclusion

نیوز چیکر کی تحقیقات میں یہ ثابت ہوتا ہے کہ اسرائیلی وزیر اعظم بنیامین نتن یاہو نے سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے نہیں، بلکہ سعودی صحافی محمد سعود سے ویڈیو کال پر بات کی تھی۔ جوکہ اسرائیل اور نتن یاہو کے حمایتی ہیں۔

Result: Manipulated media

Our Source

MidleeastEye

wilayat

Al jazeera

Gaza post

Nitin yaho Tweet

نوٹ:کسی بھی مشتبہ خبرکی تحقیق،ترمیم یا دیگرتجاویز کے لئے ہمیں نیچے دئیے گئے واہٹس ایپ نمبر پر آپ اپنی رائے ارسال کر سکتےہیں۔

9999499044

Mohammed Zakariyahttps://newschecker.in/ur
Zakariya has an experience of working for Magazines, Newspapers and News Portals. Before joining Newschecker, he was working with Network18’s Urdu channel. Zakariya completed his Master in Mass communication and Journalism from Lucknow University.Lucknow
Mohammed Zakariyahttps://newschecker.in/ur
Zakariya has an experience of working for Magazines, Newspapers and News Portals. Before joining Newschecker, he was working with Network18’s Urdu channel. Zakariya completed his Master in Mass communication and Journalism from Lucknow University.Lucknow

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

Most Popular